آخری سانس تک (Parveen Sultana Hina پروین سلطانہ حناؔ)

Download PDF

 

پروین سلطانہ حناؔ

آخری سانس تک

کس قدر چاہ سے

یاد کے ہاتھ نے

دل کی دیوار پر

اِک گھڑ ی نصب کی ہے ترے پیار کی

دھڑ کنوں کی طرح جو رکی ہی نہیں

زندگی میں مری آخری سانس تک

ذکر تیرا کروں، اور کرتی رہوں

صبح سے دوپہر

اور پھر شام تک

شب کا پہلا پہر

ہو کہ نصف رات تک

آخری با ت تک

قلب مسکن ہے میرا تری یاد کا

تیرے رنگ، تیری خوشبو، تری ذات کا

آنکھ بھی ہم سفر ہر قدم پر رہی

یاد بھی پھوار بن کر برستی رہی

ذکر کی کہکشاں جگمگا تی رہی

دھڑ کنیں ساز پر گیت گاتی رہیں

اور یہ سوچیں تجھے گنگناتی رہیں

زندگی میں مری آخری سانس تک

 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔***۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

Posted in Articles By Other Writers, Uncategorized | Tags , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , | Bookmark the Permalink.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *