آل داؤد (Abu Yahya ابویحییٰ)

Download PDF

 

قرآن مجید میں حضرت داؤد علیہ السلام کے حوالے سے یہ بات بیان کی گئی ہے کہ جب وہ اللہ کی حمد اور تعریف کے نغمے گاتے تو پہاڑ اور پرندے ان کے ساتھ حمد میں مشغول ہوجاتے۔ حضرت داؤد پر نازل ہونے والی کتاب زبور اسی حمد کا مجموعہ ہے اور اس کے متعلق اللہ تعالیٰ نے بڑے اعزاز سے یہ بات بیان کی ہے کہ یہ کتاب اللہ تعالیٰ نے حضرت داؤد کو عطا کی تھی۔ گویا مطلب یہ ہوا کہ حضرت داؤد نے اللہ کی جو حمد کی تھی وہ اللہ ہی کی عطا تھی۔

حقیقت یہ ہے کہ اللہ تعالیٰ کی تعریف کرنا ایک ایسا اعزاز ہے جو دنیا کی عظیم ترین نعمت ہے۔ یہ اعزاز ہر ہما شما کو نصیب نہیں ہوتا۔ جس شخص کی نگاہ مذہب اور مذہبی ادب پر ہے وہ یہ دیکھ کر حیران رہ جاتا ہے کہ مذہب کے نام لیواؤں میں بھی اللہ تعالیٰ کی حمد و تسبیح کا اعزاز بہت کم لوگوں کو حاصل رہا ہے۔ زیادہ تر مذہبی لوگ خدا کو مان کر بھی غیر اللہ کی عظمت، اپنے اکابرین کی بڑائی اور اپنے تعصبات میں زندہ رہے۔ اسی طرح خدا کو بھول جانے، اس کی نافرمانی کرنے اور اس کی ناشکری کرنے والے بھی اس عزت سے محروم رکھے جاتے ہیں ۔

اللہ جل جلالہ کی حمد کی عزت صرف انھی کو دی جاتی ہے جو لمحہ لمحہ اس کی یاد میں گم رہتے ہیں۔ جو اس کی خاطر اپنے ہر تعصب اور ہر فرقہ وارانہ وابستگی کو قربان کر دیتے ہیں۔ جو غیب میں رہ کر بھی ہر جگہ اس کی نعمت اور احسان کو دیکھ لیتے ہیں۔ جو پیغمبروں کو اپنے قومی فخر کے بجائے اللہ کے کے نبی کے طور پر دریافت کرتے ہیں۔ جو اس کی مرضی کو اپنی قوم پرستانہ سوچ اور جذبا ت وخواہشات پر غالب رکھتے ہیں ۔

یہی گنتی کے وہ آل داؤد ہیں جن پر خداکا فضل ہوتا ہے اور ان کو حمد باری تعالیٰ کے لیے قبول کیا جاتا ہے۔ ان کے الہامی نغموں کے ساتھ آج بھی پہاڑ تسبیح کے گیت گاتے، پرندے حمد کے ترانے گنگناتے اور ابن آدم تکبیر بلند کرتے ہیں۔ اللہ اکبر۔ لا الہ الا اللہ۔ و اللہ اکبر۔ وللہ الحمد ۔۔۔۔

۔۔۔۔۔۔***۔۔۔۔۔۔۔

Posted in ابویحییٰ کے آرٹیکز, ایمان | Tags , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , | Bookmark the Permalink.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *