اصول پسند کیسے بنیں (Abu Yahya ابویحییٰ)

Download PDF

 

سورج زمین سے تقریباً نو کروڑ میل دورہے ۔ اگر یہ فاصلہ کچھ کم یا زیادہ ہوجائے تو کرہ ارض سے زندگی ختم ہوجائے گی۔ مگر سورج کو اس کے رب نے ایک اصول کا پابند کر دیا ہے جس کے خلاف وہ کبھی نہیں کرتا۔ یہی کائنات کی ہر چیز کا معاملہ ہے کہ وہ مقرر کردہ اصولوں پر عمل کرتے ہیں ۔ سوائے انسان کے جن کو آزاد پیدا کیا گیا ہے اور مطالبہ یہ ہے کہ وہ خود اپنی مرضی سے اصولوں کی پابندی کریں ۔ جب انسان یہ کرتے ہیں تو معاشرہ چین و امن سے بھرجاتا ہے اور جب نہیں کرتے تو بدامنی اور فساد پیدا ہوتا ہے ۔

تاہم اپنی مرضی سے اصول پسند ہونا بہت مشکل کام ہے۔ یہ اپنے مفاد، جذبات اور آسانی کے خلاف عمل کرنے کا نام ہے ۔ وقت پر نماز پڑھنا، دشمنی کے باوجود کسی کے بارے میں عدل کی بات کرنا، حرام کمائی کے آسان مواقع چھوڑ کر حلال کی تنگی میں گزارا کرنا کسی کو پسند نہیں ہو سکتا۔ یہی معاملہ ان اصولوں کا ہے جو بظاہر غیر مذہبی ہیں ۔ چنانچہ ٹریفک کی سرخ بتی پر رکنا ہو یا قطار بنا کر اپنی باری کا انتظار کرنا، ہم لوگ یہ چیزیں پسند نہیں کرتے ۔

یہ درحقیقت معاشرے کی لیڈر شپ کی ذمہ داری ہوتی ہے کہ وہ اصولوں کے معاملے میں  لوگوں کی تربیت کریں ۔ وہ ان کو بتائیں کہ اگر اصول توڑے جائیں گے تو بظاہر کچھ  فائدہ ، کچھ آسانی اور جذبات کی کچھ تسکین ہوجائے گی۔ مگر پھر آہستہ آہستہ پورا معاشرہ تباہ و برباد ہوجائے گا۔ جس سے سب کا نقصان ہو گا۔

مثلاً ٹریفک کے حادثات کا بنیادی سبب قوانین کی خلاف ورزی ہے ۔ لوگ یہ طے کر لیں کہ کوئی شخص ٹریفک کے اصولوں اور قوانین کی خلاف ورزی نہیں کرے گا تو ننانوے فیصد حادثات ختم ہوجائیں گے ۔ تاہم لوگ ایسا نہیں کرتے اور ٹریفک ہی نہیں بلکہ ہر اس اصول اور قانون کو توڑتے ہیں جس سے ذرا بھی وقتی فائدہ حاصل ہو۔

اس حوالے سے کرنے کا کام یہ ہے کہ ایک عام آدمی کے دل میں اصولوں کی محبت پیدا کی جائے ۔ اسے بتایا جائے کہ اصول پسند آدمی اللہ کی نظر میں بہترین انسان ہوتا ہے ۔ وہ اپنی اصول پسندی کی بنیاد پر ساری زندگی تہجد پڑھنے والوں اور ساری زندگی روزہ رکھنے والوں سے زیادہ عزت والا ہوجاتا ہے ۔

اس کے بعد لوگوں کے دلوں میں اصولوں کی محبت پیدا ہو گی۔ ان کو اصول کی پیروی کر کے مزہ آنے لگے گا۔ جب سب لوگ سگنل توڑ رہے ہوں گے وہ اطمینان کے ساتھ سرخ اشارے پر کھڑے رہیں گے ۔ جب سب لوگ اپنے مفادات کے لیے جھوٹ بول رہے ہوں گے تو وہ سچ بولیں گے اور اگر کوئی نقصان ہو بھی جائے تو اس کو بھی انجوائے کریں گے ۔ کیونکہ یہ نقصان ان کو جہنم کے نقصان سے بچالے گا۔

اصول پسندی کا اصل راز اصولوں کو انجوائے کرنا ہے ۔ ایسے آدمی کا چاہے کوئی نقصان ہوجائے تب بھی وہ دل میں بہت پرسکون ہوتا ہے ۔ ایسا آدمی چاہے کوئی فائدہ حاصل کرنے سے محروم ہوجائے ۔ تب بھی وہ اصول پسندی کو انجوائے کر کے زیادہ بڑا فائدہ اور زیادہ بڑی خوشی حاصل کر لیتا ہے ۔

آئیے آج سے ہم اصول پسند بننے کی کوشش کرتے ہیں ۔ اصول پسندی کو انجوائے کرتے ہیں ۔ اس کے بعد کوئی نفع رہ جائے یا نقصان ہوجائے ، ہم کبھی اصول کے خلاف نہیں جائیں گے ۔ اس کا نتیجہ آخرت میں تو بلاشبہ جنت میں اعلیٰ مقام ہے مگر اس دنیا میں بھی ذہنی سکون کی وہ دولت ہے جو لاکھوں روپے کما کر بھی نہیں مل سکتی۔ اس کا دوسرا دنیوی نتیجہ ان بیماریوں سے بچ جانا ہے جو لاحق ہو جائیں تو زندگی کا لطف غارت ہوجاتا ہے ۔

 ۔۔۔۔۔۔۔***۔۔۔۔۔۔۔۔

 

 

Posted in Uncategorized | Tags , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , | Bookmark the Permalink.

One Response to اصول پسند کیسے بنیں (Abu Yahya ابویحییٰ)

  1. zain ul abideen says:

    سلام علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ
    محترم آپ نے بہت ہی دلچسپ اور نہایت اہم کالم تحریر کیا ہے ۔ خدا ہمیں اس طرھ اصول پسندوں کے نھج پر چلنے کی توفیق عنایت فرمائے۔ مجھے بس ایک عرجی پیش کرنی تھی کہ اگر آپ کی حد نگاہ میں کہیں دور پرے ہی صحیح اگر کوئی ایسی کتاب ہو جس مین اس مضمون پر یعنی اصول پسندی پر اور اصول پسندوں کے سوانح حیات اور اس کے نتیجے میں انکی کامیابیاں بیان کی گئی ہوں تو براہ کرم ناچیز کو اس کا نام یا لنک ارسال فرمادیجئے۔
    محتاج دعا و منتظر جواب
    الاحقر
    زین العابدین

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *