اہل پاکستان کا ماتم (Abu Yahya ابو یحییٰ)

Download PDF

[عید کے دن دہشت گردوں نے ایک سیاسی لیڈرپر حملہ کیا جس میں وہ تو بچ گئے لیکن ایک گارڈ کے علاوہ ان سے عید ملنے والا چودہ سالہ بچہ نقد جان ہار گیا۔ یہ اسی حوالے سے لکھا گیا ایک آرٹیکل ہے ۔]

چار گلیاں چھوڑ کر بھی کسی خاندان کا قتل ہوجائے تو دکھ ہونا فطری چیز ہے۔ اس پر کوئی حیرت نہیں ہوتی۔ حیرت اُس وقت ہوتی ہے جب گھر میں پڑی لاش کو چھوڑ کر چارگلی دور کے قتل پر بین کیا جاتا ہے۔ اہل برما کا ماتم ہورہا ہے، سوال یہ ہے کہ اہل پاکستان کا ماتم کب ہو گا؟

اہل تشیع اور احمدیوں کے ماتم کی توقع نہ سہی کہ ہماری مذہبی فکر انہیں کافر سمجھتی ہے، چودہ سالہ معصوم ارسل ہی کا ماتم کر لیتے۔ شاید وہ بوجھ کچھ کم ہوجاتاجو روزِقیامت اٹھانا ہے ۔

چودہ سال کی عمر ایسی نہیں ہوتی کہ سر راہ عید کے دن عید ملتے ہوئے گولی مار دی جائے ۔ مگر جب یہ گولی دین و شریعت کا نام لینے والے مارتے ہیں تو پھر ہر جگہ چپ چھا جاتی ہے۔ ایسے میں کیا کہیں اور کس سے کہیں ۔ لیکن بولنا تو ہو گا کہ ایک دن خدا کو منہ دکھانا ہے ۔

اس لیے چاہے برا لگے مگرسنیے کہ روزِ قیامت اگر برمی مسلمانوں کے قاتل جہنم رسید کیے جائیں گے تو بے گناہ پاکستانیوں کے قاتلوں کا انجام بھی جدا نہیں ہو گا۔قتل کرنے والے، قتل پر آمادہ کرنے والے ، قاتلوں کو اگر مگر کی ڈھال فراہم کرنے والے ، جہاد کے مقدس نام پر بے خبر، سویلین اور غیر مسلح لوگوں کے خلاف حملوں کی توجیہ و تاویل کرنے والے اور ہاں ایسے قتل پر خاموش رہنے والے ؛ سب پروردگار عالم کے غضب سے اپنا حصہ پا کر رہیں گے ۔

خدا کا خوف اگر کسی میں باقی ہے تو اہل برما سے قبل اہل پاکستان کے قتل کا تدارک ہونا چاہیے۔ اس نظریے کوختم ہونا چاہیے جو غیر مقاتلین کے قتل کا جوازفراہم کرتا ہے۔ ہر وہ فرد، گروہ یا جماعت جس نے اس نظریے کی آبیاری میں کوئی حصہ ڈالا، اسے اب اس نظریے کے خلاف جہاد کرنا ہو گا۔ یہی ان کے لیے توبہ کا واحد راستہ ہے۔ جو شخص اس جہاد میں شریک نہیں ہوا، دنیا کی کوئی طاقت اسے روزِ قیامت خدا کے قہر سے نہیں بچا سکتی۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔***۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

Posted in ابویحییٰ کے آرٹیکز, سماجی مسائل, قومی اور بین الاقوامی مسائل | Tags , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , | Bookmark the Permalink.

One Response to اہل پاکستان کا ماتم (Abu Yahya ابو یحییٰ)

  1. dilnawaz says:

    “احمدیوں کے ماتم کی توقع نہ سہی کہ ہماری مذہبی فکر انہیں کافر سمجھتی ہے”
    qaidiani, ahmedi kafar hain kafer hain r hamesha kafir hi rahein gy . keya app un ko kafir nai samajthy? un ko kafir kehna hi en k liye rehmat hai warna kesy enhein apny kufar ka ehsas ho ga

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *