اے خدا ترے بنا۔۔۔ (Prof. Muhammad Aqil پروفیسر محمد عقیل )

Download PDF

اے میرے رب! اے میرے خدا!  تیرے بنا زندگی موت سے بھی بد تر ہے ۔ تیرے بنا چاند کی روشنی تیرگی، سورج کی کرنیں بے نور، تاروں کی چھاؤں معدوم ، فلک کی وسعت ایک تنگ گلی اور نیلگوں آسمان ایک سیاہ چادرہے ۔ تیرے بغیر پرندوں کی چہچہاہٹ ایک بے ہنگم شور، پھولوں کی مہک بے کیف بو ، قوس قزح لایعنی لکیریں ، باد نسیم صحرا کے تھپیڑے ، پتوں کی سرسراہٹ بے معنی آواز، ساحل کی موجیں بے سبب یلغار اور بارش کے قطرے تپتے ہوئے سنگریزے ہیں ۔

تیرے بغیر زیست بس سانسوں کا آنا جانا ، دل محض گوشت کا لوتھڑا ، عقل عیاری کی آماجگاہ، نگاہیں ابلیس کی پناہ گاہ اور بدن اک زندہ لاش ہے ۔ تیرے بنا ہر حسن غلاظتوں کا ڈھیر، ہر رشتہ لایعنی تعلق، ہر انسان شیطان کا سایہ ، اور ہر محفل اجڑا ہوا دیار ہے ۔

تیرے بنا یہ نمازیں ریاکاری ، یہ زکوٰۃ سانپوں کا ڈنک، یہ حج فقط اک یاترا اور یہ روزے احمقوں کافاقہ ہیں ۔ تیرے بنا تبلیغ محض ڈھونگ ، تقریر نقلی پھولوں کا گلدستہ ، حیا فقط تکلف، مذہبی پیشوائیت پنڈت کی دوکان، جہاد اک فساد، اذان ایک رسمی اعلان ، جمعہ ایک لایعنی اجتماع اور عید ابلیس کی بزم ہے ۔ تیرے بنا تفریح ایک بے ہودہ عمل، غناء ایک بے ہنگم شور اور سماج ایک جم غفیر ہے ۔ تیرے بغیر کمانا ایک حرام عمل، لین دین استحصال کا ذریعہ، فلاح کا کام محض دکھاوا، تعلیم جہل کی بنیاد ، کھانا پینا جانوروں کا فعل اور جنسی تعلق نری حیوانیت ہے ۔

میں یہ چاہتا ہوں کہ تو ہو اور مرے من میں تجھ سا کوئی نہ ہو۔ تو نہیں توکچھ بھی نہیں ۔ تو ہے تو سب کچھ ہے ۔ تو ہے توگلوں میں رنگ ہے ، باد نوبہار ہے ۔ ترنم ہزار ہے ، بہار پر بہار ہے ، ہوا بھی خوشگوار ہے ۔ تو ہے تو نماز یہ معراج ہے ، زکوٰۃ بہت پاک ہے ، صوم اک نکھار ہے ، حج اک خمار ہے ۔ میں چاہتا ہوں کہ تو میرے شب و روز میں آ، میرے تکلم میں سما، میری سماعتوں کو جگا، میری نگاہوں میں بس جا، میری نیندوں کو سجا، میرے سجدوں کو بسا، مجھ کو راتوں میں اٹھا، رگ جاں سے بھی قریب آ اور پھردور نہ جا۔

_________***_________

 

Posted in ابویحییٰ کے آرٹیکز | Tags , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , | Bookmark the Permalink.

11 Responses to اے خدا ترے بنا۔۔۔ (Prof. Muhammad Aqil پروفیسر محمد عقیل )

  1. Hafsa says:

    very nice and unique

  2. sajjal says:

    the most beautiful

  3. fareena says:

    Buhat Umdha..Very nice…excellent Urdu language usage.
    5/5 stars..
    JazakAllah.
    May Allah reward the writer and all of us.

  4. Mohammed Nayyer Afroze says:

    ameen!!!!!!!!!summa ameen

  5. babar says:

    subhan Allah kaya shandar dua hai

  6. mrs hassan says:

    sir
    Assalam o Alekum

    ap ka apne Allah se ta-alluq itna qreeb ka hai.ap aisa feel krtey heen.so ap k qalam se aise alfaaz nikle.ap ka ta-alluk aise bna rahe.ap agy ki manzileen taa kren.aameen.bahut se log feelings tu aisi rakhte hn mgr un ko raasta nhi mil raha hota.aise logo ko apni duaon meen yaad rakha kren.

  7. Hafeez Khan says:

    Ya Allah jo dua-ain maangi gayi hain onhain qabool farma. Aameen!

  8. anonymous says:

    mashaAllah, quite deep message, so nicely conveyed….

  9. Isfandyar Azmat says:

    کمال کا ایمان افروز مضمون ہے۔ پڑھ کر بے شک ایمان تازہ ہوا۔ اپنے مالک کے ساتھ ربط و تعلق کے نءے ولولے جاگے اور شوق بھڑکے۔ خوبصورت لکھنے والے تو بہت مل جاتے ہیں لیکن ایسے مضامین سچے دل اور حقیقی حال کے بغیر وجود میں نہیں آتے۔ خدا محرر کو جزاءے بے بہا عطا فرماءے، آمین۔۔۔

  10. Amy says:

    Jazak Allah Khair

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *