حرف روشن ہوئے (Parveen Sultana Hina پروین سلطانہ حناؔ)

 

پروین سلطانہ حناؔ

لوحِ دل پہ لکھّا اے خدا، اے خدا

تیرا محبوب ہے مصطفٰی، مجتبیٰ

پھول، شبنم، کرن، چاندنی اور ہوا

گنگنانے لگی مل کے ساری فضا

حرف روشن ہوئے

صبحِ دم جب سیاہی کا پردہ اٹھّا

صوت کی دھڑکنوں نے اسے دی صدا

اور حمد و ثنا کا دیا جب جلا

اس کی توصیف سے گونج اٹھی فضا

حرف روشن ہوئے

چاند، سورج، ستاروں، بہاروں کو جب

میں نے حسنِ حقیقی کا جلوہ کہا

خوبصورت گلابوں کی خوشبو کو جب

اُس حسین، دل نشین کا سراپا لکھا

حرف روشن ہوئے

اس کی مدحت کی خاطِر قلم کو چھوا

جسم و جاں نے محبت کا نغمہ لکھا

تیز چلنے لگی رحمتوں کی ہوا

اور بھی کھُل گیا پھر تو رنگِ حناؔ

حرف روشن ہوئے

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔***۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

Posted in Uncategorized | Tags , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , | Bookmark the Permalink.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *