حمد (Parveen Sultana Hina پروین سلطانہ حنا)

 

حمد

(پروین سلطانہ حنا)

مرے خیال کا محور ہے میرا سب تو ہے

میں خوش گمان ہوں تجھ سے کہ میرا رب تو ہے

مرا وجود گواہی ہے تیری رحمت کی

جو نعمتیں ہیں میسر مجھے سبب تو ہے

فنا بقا کا تسلسل تجھی سے ملتا ہے

مرا حسب، مرا شجرہ، مرا نسب تو ہے

ہر ایک فکر پہ حاوی رہا ہے دھیان ترا

بنی ہے ڈور یہ سانسوں سے دور کب تو ہے

ہیں حروف بانجھ کروں کس طرح ثنا تیری

کہ سارے لفظ ہیں ساکت نظر میں رب تو ہے

ترے ہی نام سے ہے معتبر قلم میرا

مرا خیال، مری فکر اور ادب تو ہے

سزا کے واسطے ، روزِ جزا مقرر ہے

یہ آگ بھی ترا جلوہ ہے اور غضب تو ہے

خطائیں میری، کرم تیرا، درگزر تیری

خطائیں بخش دے میری کہ میرا رب تو ہے

جو مانگنا ہو وہ کہنا، ذرا سنبھل کے حنا

وہ سامنے ہے ترے اور بے ادب تو ہے

______***____________***_______

 

Posted in Uncategorized | Tags , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , | Bookmark the Permalink.

3 Responses to حمد (Parveen Sultana Hina پروین سلطانہ حنا)

  1. Hadia Rosy says:

    SubHanALLAH ! ALLAHu AKBER

  2. Abdul Sattar says:

    Excellent. All Praise to Allah

  3. Amy says:

    Jazak Allah khair

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *