دنیا و آخرت کی بھلائی ( Abu Yahya ابویحییٰ )

 

اس دنیا میں انسانوں کے بارے میں اللہ تعالیٰ کے منصوبے سے متعلق دو باتیں ایسی ہیں جن میں قرآن مجید آخری درجے میں واضح ہے۔ لیکن لوگ ان دوباتوں کو ماننا نہیں چاہتے ۔ اسی چیز نے اسلام کے دعوے دار ہر شخص کو ذہنی سکون سے محروم  کر رکھا ہے ۔

پہلی بات جسے نہ سمجھنے کی وجہ سے لوگ بے سکونی کا شکار ہیں وہ یہ ہے کہ اس دنیا میں اللہ نے انسان کوآزادی دے کر بھیجا ہے اور اس امتحان میں ڈالا ہے کہ اسے کسی بیرونی دباؤ کے بغیر خود اپنی مرضی سے اس آزادی سے دستبردار ہوکر خدا کی بات ماننی ہے ۔ ورنہ اللہ تعالیٰ چاہتے تو انسانوں کو یہ آزادی ہی نہ دیتے بلکہ دیگر مخلوقات کی طرح وہ بھی اختیار و آزادی سے محروم ہوکر اطاعت کرتے رہتے ۔

بدقسمتی سے بہت سے لوگ اس حقیقت کو نہیں ماننا چاہتے ۔ وہ دعوت، تلقین، ترغیب و ترہیب اور تربیت کے بجائے نافذ کر کے ، ٹھونس کراور اب تو دھونس و دھمکی کے ساتھ اپنا فہم دین لوگوں سے منوانا چاہتے ہیں ۔ ظاہر ہے یہ ممکن نہیں ۔ چنانچہ یہ کرنے والے ہمیشہ سکون واطمینان سے محروم اور مسلسل اضطراب کا شکار رہتے ہیں ۔

دوسری حقیقت اس امتحان سے متعلق یہ ہے کہ اس امتحان میں انسان کا نصب العین دنیا کو جنت بنانا نہیں ، بلکہ ہر طرح کے حالات میں ایمان و اخلاق کے تقاضوں پر قائم رہ کر خود کو جنت کا حقدار ثابت کرنا ہے ۔ یہ دنیا کبھی جنت نہیں بن سکتی۔ ہاں بہتر ہو سکتی ہے اور اسے بہتر بنانے کی کوشش کرتے رہنا چاہیے ۔ مگر یہ اصل مسئلہ نہیں ۔ اصل مسئلہ یہاں رہ کر ایمان او خلاق کا بہترین نمونہ یعنی رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم جیسی ہستی بننے کی کوشش کرنا ہے ۔

جس شخص نے ان دوباتوں کو سمجھ لیا وہ دنیا و آخرت کی ہر خیر پا گیا۔ جس نے انھیں نہ سمجھا وہ دنیا و آخرت دونوں میں محروم اور بے سکون رہے گا۔

______***______

 

 

 

Posted in ابویحییٰ کے آرٹیکز | Tags , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , | Bookmark the Permalink.

5 Responses to دنیا و آخرت کی بھلائی ( Abu Yahya ابویحییٰ )

  1. sajjal says:

    very true

  2. Sajjad says:

    Subhan ALLAH

  3. Gul Rayz says:

    Bilkul durust farmaya…..

  4. Amy says:

    Jazak Allah khair

  5. umara zahid says:

    very true. JazakAllah

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *