علم نافع ( Abu Yahya ابویحییٰ )

احادیث کے نام سے جو ذخیرہ اس وقت مسلمانوں کے پاس موجود ہے اس میں غالباً سب سے زیادہ قیمتی چیز رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی دعائیں ہیں۔ امام مسلم نے ایسی ہی ایک بے مثال دعا اپنی صحیح میں نقل کی ہے۔ اس دعا کا ایک جز درج ذیل ہے :

اللھم انی اعوذبک من علم لا ینفع

اے اللہ میں اس علم سے تیری پناہ مانگتا ہوں جو فائدہ مند نہ ہو، (مسلم ، رقم 2722)

علم کئی پہلوؤں سے غیر نافع ہو سکتا ہے ۔ مگر ان میں سب سے زیادہ تباہ کن پہلو یہ ہے کہ انسان علم حاصل کرے اور یہ علم اس کی شخصیت میں کوئی ارتقا پیدا نہ کرے۔ اس کی مثال ایسی ہی ہے کہ ایک بچہ خوراک کھائے مگر یہ غذا جزو بدن نہ بنے اور بچے کی نشو ونما رک جائے۔ جس کے بعد والدین فوراً بچے کو ڈاکٹر کے پاس لے کر جائیں گے۔ ڈاکٹر پہلے مرحلے پر بچے کے نظام ہاضمہ کا جائزہ لے کر یہ دیکھے گا کہ غذا ہضم کیوں نہیں ہو رہی۔ کیونکہ یہی مسئلے کی جڑ ہے ۔

علم کا معاملہ بھی مختلف نہیں۔ علم بلا واسطہ یا بالواسطہ شخصیت کو بہتر بناتا ہے۔ مگر یہ صرف ان لوگوں کے ساتھ ہوتا ہے جو غوروفکر کی صلاحیت استعمال کر کے اس علم کو ہضم کریں اور اسے قیمتی اسباق میں تبدیل کریں ۔جبکہ دوسرے لوگوں کو یا تو علم کا قبض یا پھر علمی اسہال ہوجاتے ہیں ۔ پہلی قسم کے لوگ جو پڑھتے سنتے ہیں وہ ا ن کے دما غ تک محدود رہتا ہے۔ یہ علمی قبض علم کو شخصیت تک منتقل نہیں ہونے دیتا ۔ جبکہ علمی اسہال میں انسا ن جو سیکھتا ہے منہ کے راستے دوسروں پر خارج کر دیتا ہے، خود کچھ نہیں کرتا۔ ایسے لوگوں کی شخصیت میں بھی ارتقا نہیں ہو پاتا۔

علم نافع دراصل علم کو اسباق میں بدلنے اوراپنی فکر اور شخصیت کو اس کے مطابق ڈھالنے کا نام ہے ۔ ورنہ کتنی ہی کتابیں پڑھ لی جائیں اور کتنے ہی لیکچر سن لیے جائیں ، سب بے کار ہیں ۔

Posted in ابویحییٰ کے آرٹیکز | Tags , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , | Bookmark the Permalink.

2 Responses to علم نافع ( Abu Yahya ابویحییٰ )

  1. anonymous says:

    mashaAllah, well said …

  2. Amy says:

    Jazak Allah khair

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *