غزل (Ahmed Bashir Tahir احمد بشیر طاہرؔ)

احمد بشیر طاہرؔ

زباں سے خیر کہوں اور خیر عام کروں

نہیں رسول کہ میں حجتیں تمام کروں

کسی کے کفر کا، ایمان کا، کہوں کیسے؟

کسی کے قلب میں جھانکوں تو کچھ کلام کروں

خدا سے رحم کا طالب ہوں، پس یہ واجب ہے

خدا کے بندوں سے رحمت کا التزام کروں

کسی کے مذہب و فرقہ سے کچھ نہیں لینا

مجھے تو حکم ہے جو بھی ملے سلام کروں

خدا کا کام ہے ، وہ فیصلے کرے سب کے

مجھے ہے امر کہ بندوں کا احترام کروں

خدا کرے وہ مری ذات میں اثر پیدا

محبتوں کی نمو ہو جہاں قیام کروں

٭٭٭٭٭٭

Posted in Articles By Other Writers, Uncategorized | Tags , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , | Bookmark the Permalink.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *