غزل (Ahmed Bashir Tahir احمد بشیر طاہر)

احمد بشیر طاہر

ہوا ہے فیصلہ بستی جلائی جائے گی

پھر اس کے بعد شب غم منائی جائے گی

امیر شہر کو رونا ہے جس قیامت پر

کسی غریب کے گھر میں اٹھائی جائے گی

مجھے صفائی کا موقع بھلے ملے نہ ملے

سنا ہے عام عدالت لگائی جائے گی

بلا کے سامنے کر کے کھڑ ا کٹہرے میں

میرے خلاف کہانی بنائی جائے گی

یہ داستانِ وفا ہے یہاں نہیں طاہرؔ

بروز حشر سنی اور سنائی جائے گی

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

Posted in Uncategorized | Tags , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , | Bookmark the Permalink.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *