غزل (Parveen Sultana Hina پروین سلطانہ حناؔ)

Download PDF

پروین سلطانہ حناؔ

 

زندگی چاہت کے لیے تھوڑی ہے

!منافرت کی کمین گاہوں میں رہنے والو

یہ وقت اپنی اڑان میں ہے

کہ تیر جیسے کمان میں ہے

تم اپنی عمروں کی برف دیکھو

جو لمحہ لمحہ پگھل رہی ہے

جو سرد پانی میں ڈھل رہی ہے

محبتوں کے لئے نہیں ہے

مجھے میّسر ذرا سی فرصت

عداوتوں کے لئے کہاں سے

خرید لائے ہو اتنی مہلت

مرے خیالوں کی رہگزر پر

اک ایسا چشمہ ابل رہا ہے

کہ جس کی شیریں حلاوتوں سے

پیاسے من کو قرار آئے

غرور و نفرت کے خارزاروں پہ

دھیرے دھیرے بہار آئے

خدا کرے اس حسین چشمے کی رو میں آ کر

تمام بہہ جائیں ظلم و نفرت کی قتل گاہیں

نکھرتے جائیں زمیں کے موسم

ابھرتی جائیں نئی فضائیں

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔***۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

Posted in Articles By Other Writers, Uncategorized | Tags , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , | Bookmark the Permalink.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *