غزل (Parveen Sultana Hina پروین سلطانہ حنا)

غزل

جب زمین کا موسم دشتِ بے اماں ہو گا

روزِ حشر سے پہلے حشر کا سماں ہو گا

آگ و خوں کی بارش میں جان کا زیاں ہو گا

مل کے بیٹھ جاؤ تو وقت مہرباں ہو گا

ایٹمی لڑائی کو اتنا سہل مت جانو

آدمی کی بستی میں حادثہ گراں ہو گا

ذہن و دل کے خانوں کی مختلف ہیں آوازیں

اختلاف تو ہو گا آدمی جہاں ہو گا

ظلم کو مٹا ڈالو، فاختہ کو مت مارو

امن کی فضاؤں میں ورنہ پھر دھواں ہو گا

کائنات مہکے گی خوشبوؤں کی بارش سے

امن کی بہاروں کا حسن جب عیاں ہو گا

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔***۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

Posted in Uncategorized | Tags , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , | Bookmark the Permalink.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *