مکاتیب – اپریل2014 ( Abu Yahya ابویحییٰ )

 مکاتیب 

ابویحییٰ 

کال گرل کی اصلاح

برادر عزیز شارق

السلام علیکم و رحمت اللہ و برکاتہ

جیسا کہ میں نے پچھلے ای میل میں عرض کیا تھا کہ جب کوئی نوجوان بچی جسم فروشی میں ملوث ہوتی ہے تو اس کی چند ہی وجوہات ہوتی ہیں ۔ یا تو وہ مجبور ہوتی ہیں کہ کسی نے ورغلا کر اسے پہلی دفعہ آلودہ کر دیا ہو اور اس کے بعد بلیک میلنگ کر کے مجبور کیا گیا ہو۔ یا گھر سے بھاگنے والی لڑکیوں کے ساتھ یہ ہوتا ہے ۔ صرف غربت اس طرح کی چیزوں کا سبب نہیں بنتی۔ اس کے ساتھ یا تو لڑکیوں کی تربیت اچھی نہیں ہوتی یا پھر ان میں اپنی غربت کو شارٹ کٹ طریقے سے ختم کرنے کا شوق پیدا ہوجاتا ہے ۔ ظاہر ہے کہ یہ غربت اور تنگ دستی کو ختم کرنے کا ایک فوری اور بہت آسان نسخہ ہے ۔

آپ کے ای میل سے یہ واضح ہوجاتا ہے کہ یہ بچی جس کے متلعق آپ مشورہ کر رہے ہیں خراب تربیت کا شکار اور معیار زندگی بلند کرنے کی خواہش مند ہے ۔ اس لیے اس کو سمجھانے کے لیے ترغیب و ترہیب کے ہر پہلو سے کام لینا ہو گا۔ یعنی اسے پاکدامنی پر ملنے والے اجر کے بارے میں بھی بتانا ہو گا اور بدکاری پر آخرت کی سخت پکڑ پر بھی توجہ دلانی چاہیے ۔ ساتھ ہی یہ بات بھی بتانا ہو گی کہ کال گرل کی زندگی صرف دس سال ہوتی ہے ۔ اس کے بعد باقی زندگی مختلف جنسی بیماریوں کے ساتھ گزرتی ہے اور بارہا بیچ ہی میں ختم ہوجاتی ہے۔ اس بچی کو یہ کہہ کر بھی سمجھایا جا سکتا ہے کہ پاکستان میں جنسی امراض اور جنسی طریقوں سے پھیلنے والے امراض یعنی ایڈز، ہیپاٹائٹس بہت بڑھ  چکے ہیں ۔ اب عملاً یہ ممکن نہیں کہ کوئی لڑکی یہ راستہ اختیار کرے اور اس کے بعد ان موذی امراض سے بچ سکے۔ اس لیے آخرت نہ سہی دنیا کی مصیبت سے بچنے کے لیے کال گرل کا کام فوراً چھوڑ دے ۔

اللہ ہم سب پر اپنا فضل فرمائے آمین۔

ابویحییٰ

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

Posted in Letters - مکاتیب, ابویحییٰ کے آرٹیکز | Tags , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , | Bookmark the Permalink.

One Response to مکاتیب – اپریل2014 ( Abu Yahya ابویحییٰ )

  1. Amy says:

    Jazak Allah khair.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *