2014 سلسلہ روز و شب – مئی ( Abu Yahya ابویحییٰ)

Download PDF

 سلسلہ روز و شب

ابویحییٰ

نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی زبور میں پیش گوئی

محترم قارئین! پچھلے ماہ زبورمیں حضرت داؤد کی اس پیش گوئی کے حوالے سے کچھ گزارشات پیش کرنا شروع کی تھیں جو انھوں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے حوالے سے کی تھی۔ یہی پیش گوئی تھی جس کی اہمیت کی بنا پر سیدنا مسیح نے اسے انجیل میں دہرایا تھا۔ اس پیش گوئی کے بیان سے قبل میں نے حضرت دادؤ کی زندگی کے کچھ حالات بیان کیے تھے۔ نیز یہ بھی بتایا تھا کہ کس طرح زبور کے ایک مزمور میں وہ حرم پاک کی یادوں کو تازہ کرتے اور مکہ کو بکہ کے اس نام سے یاد کرتے ہیں جس کا ذکر قرآن میں بھی آیا ہے ۔

زبور میں نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی پیش گوئی

تاہم جس پیش گوئی کا میں نے ذکر کیا ہے وہ زبور کے ایک دوسرے مزمور (زبور :118) میں آئی ہے ۔ جہاں تک میں سمجھا ہوں یہ مزمور عین حالت حج میں کہا گیا ہے ۔ قارئین کی سہولت کے لیے اس مزمور کو پورا نقل کر رہا ہوں ۔ کیونکہ اس سے نہ صرف پوری بات سمجھ میں آئے گی بلکہ یہ واضح کرنے میں بھی سہولت رہے گی کہ یہود و نصاریٰ اس پیش گوئی کا رخ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے موڑ کر کس طرح دوسروں کی طرف کر دیتے ہیں ۔ پھر اس سے یہ فائدہ بھی ہے کہ یہ مزمور ریکارڈ پر آجائے گا کیوں کہ یہود و نصاریٰ کا دستور ہے کہ وہ جب یہ دیکھتے ہیں کہ کسی مسلمان نے ان کی کتاب سے نبی عربی کی صداقت کا کوئی ثبوت پیش کر دیا ہے تو وہ فوراً اس ترجمے کو متروک قرار دے کر ایک ایسا نیا ترجمہ کرتے ہیں جس میں اصل بات غائب کر دی جاتی ہے ۔

یہ مزمور نقل کرنے سے قبل یہ بھی واضح کر دوں کہ دیگرالہامی کتب کی طرح زبور بھی ترجمہ در ترجمہ کے عمل سے گزری ہے۔ اس کے نتیجے میں اس میں اب وہ تاثیر محسوس نہیں ہو گی جو قرآن مجید نے بیان کی ہے کہ پہاڑ اور پرندے بھی حضرت داؤد کے ساتھ حمد و تسبیح کرتے تھے۔ مگر بہرحال وہ معنویت موجود ہے جس کی بنا پر قرآن مجید نے بار بار ان کتابوں کا حوالہ دے کر یہ کہا تھا کہ ہمارے نبی کا تذکرہ تم ان کتابوں میں لکھا ہوا پاتے ہو (اعراف 157: 7) ۔

حضرت داؤد کا مزمور

اس مزمور کے کئی حصے ہیں ۔ میں ذیل میں مزمور نقل کر رہا ہوں اور ساتھ ساتھ اہم باتوں کی وضاحت بھی کرتا جاؤں گا۔

خداوند کا شکر کرو کیونکہ وہ بھلا ہے

اور اس کی شفقت ابدی ہے

اسرائیل اب کہے

اس کی شفقت ابدی ہے

ہارون کا گھرانہ اب کہے

اس کی شفقت ابدی ہے

خداوند سے ڈرنے والے اب کہیں

اس کی شفقت ابدی ہے

یہ ابتدائی آیات یعنی 1 تا 4 اللہ کی حمد پر مشتمل ہیں ۔ جبکہ آخری آیت یعنی 29 میں بھی یہی حمدیہ مضمون دہرایا گیا ہے۔ یہی حمدیہ انداز زبور کی وجہ شہرت بھی ہے ۔ پھرآیت 5 سے 18 تک وہ یہ بیان کرتے ہیں کہ کس طرح ان کے دشمنوں نے ان کو گھیرلیا تھا اور فلسطین کی تمام قومیں ان کے خلاف ہوگئی تھیں مگر انھوں نے اللہ سے مدد مانگی اور اسی پر بھروسہ رکھا تو اللہ نے انھیں ان دشمنوں سے نجات عطا فرمادی۔ پھر وہ اپنے لیے اس مزمور میں ایک عظیم پیش گوئی کرتے ہیں کہ وہ اپنے تمام دشمنوں کو شکست دیں گے اور ان کو مارنے والوں کی تمام تر کوششوں کے برخلاف وہ زندہ رہیں گے اور اللہ کی حمد کرتے رہیں گے۔ کس طرح وہ ایک سخت آزمائش سے تو گزرے مگر آخر کار اللہ نے انھیں بچالیا۔ فرماتے ہیں :

میں نے مصیبت میں خداوند سے دعا کی

خداوند نے مجھے جواب دیا اور کشادگی بخشی

خداوند میری طرف ہے میں ڈرنے کا نہیں

انسان میرا کیا کر سکتا ہے ؟

خداوند میری طرف میرے مددگاروں میں ہے

اس لیے میں اپنے عداوت رکھنے والوں کو دیکھ لوں گا

خداوند پر توکل رکھنا

انسان پر بھروسا رکھنے سے بہتر ہے

خداوند پر توکل رکھنا

امراء پر بھروسا رکھنے سے بہتر ہے

سب قوموں نے مجھے گھیر لیا

میں خداوند کے نام سے ان کو کاٹ ڈالوں گا

انہوں نے مجھے گھیر لیا۔ بیشک گھیر لیا

میں خداوند کے نام سے ان کو کاٹ ڈالوں گا

انہوں نے شہد کی مکھیوں کی طرح مجھے گھیر لیا۔ وہ کانٹوں کی آگ کی طرح بجھ گئے

میں خداوند کے نام سے ان کو کاٹ ڈالوں گا

تو نے مجھے زور سے دھکیل دیا کہ گر پڑوں

لیکن خداوند نے میری مدد کی

خداوند میری قوت اور میرا گیت ہے

وہی میری نجات ہوا

صادقوں کے خیموں میں شادمانی اور نجات کی راگنی ہے

خداوند کا داہنا ہاتھ دلاوری کرتا ہے

خداوند کا داہنا ہاتھ بلند ہوا ہے

خداوند کا داہنا ہاتھ دلاوری کرتا ہے

میں مروں گا نہیں بلکہ جیتا رہوں گا

اور خداوند کے کاموں کو بیان کروں گا

خداوند نے مجھے سخت تنبیہ تو کی ہے

لیکن موت کے حوالہ نہیں کیا

Posted in ابویحییٰ کے آرٹیکز, سلسلہ روز و شب | Tags , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , | Bookmark the Permalink.

One Response to 2014 سلسلہ روز و شب – مئی ( Abu Yahya ابویحییٰ)

  1. Amy says:

    Jazak Allah khair.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *